اردو ادب اورانفارمیشن ٹیکنالوجی کا ایک ایسا اردو فو رم جہا ں پر بہت کچھ سیکھنے کے علاوہ آپ کو ملے گھر جیسا ماحول، ایڈمن ”پاکستانی پوائنٹ“ محترم وقا ر عظیم صا حب کا تفصیلی انٹرویو ۔

سوشل نیٹ ورکس پر وقت گزاری اب ایک فیشن بن گیا ہے۔ زیادہ تر نوجوان صرف ٹائم پا سنگ کےلئے یا نئے نئے دوست بنانے کےلئے سوشل نیٹ ورکس کو جائن کرتے ہیں جبکہ حقیقت یہ ہے کہ سوشل نیٹ ورکس پر بننے والے تعلقات زیادہ مضبوط اور پائےدار نہیں ہوتے۔ اس کے برعکس تمام اردو فورمز پر آپ کو دوستانہ ما حول ملتا ہے ۔ سب ممبرز ایک دوسرے کے دُکھ سکھ میں شریک ہوتے ہیں یہاں پر آ پ کو اچھے ، مخلص، ہمدرد اور رہنمائی کرنے والے دوست بھی مل جاتے ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ آپ کو بہت کچھ سیکھنے کا موقع بھی ملتا ہے ۔
اردو فورم ”پا کستانی پوا ئنٹ“ کے ایڈمن محترم وقارعظیم صاحب کا یہ انٹرویو اُن کی ذات، خدمات یا فورم کی تشہیر کےلئے نہیں کیا گیا بلکہ میرا مقصد اُن سے ایسے تما م سوالوں کا جواب حاصل کرنا تھا جو میری عمر کے سٹوڈنٹس کے ذہنوں میں آتے تو ہیں لیکن انہیں اس کا کہیں سے تسلی بخش جواب نہیں ملتا شائد آپ حیران ہوں کہ میرے زیادہ تر دوستوں کوابھی تک اردو فورمزکے بارے میں کچھ بھی پتا نہیں ہے ۔
محترم وقا رعظیم صاحب ایڈمن ”پا کستانی پوائنٹ“ کا یہ انٹر ویو اس لحاظ سے بہت منفرد اور معلوما تی ہے کہ اس انٹرویو میں اردو فورمز کے کا م کرنے کے طریقہ کا ر کے بارے میں بہت تفصیل کے ساتھ بتایا گیا ہے ۔ اردو ادب اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے فروغ کےلئے پاکستانی پوائنٹ کیا کیا خدمات سر انجام دے رہا ہے یہ جاننے کےلئے پڑھیے محترم وقار عظیم صاحب کا یہ انٹرویو ۔

سوال : آپ کا آبائی تعلق کس شہر سے ہے ، کہاں کہا ں سے تعلیم حاصل کی اور الیکٹریکل انجینئر بننے کا فیصلہ آپ نے کیا سو چ کر کیا ؟

جواب : میرا آبائی شہر سرگودھا ہے2001 میں ہم لوگ جدہ شفٹ ہو گئے تھے۔ میں تعلیم کی خاطر پاکستان واپس Enjoy1485(1)آیا اور مظفر گڑھ ابدالین سائنس ہائیر سکینڈری سکول سے ایف ایس پاس کی اور جدہ واپس آ گیا،میں نے چھوٹے چھوٹے کورسسز ایم سی پی اور سی سی این اے کرنے کے بعد دو سال جدہ میں بطور نیٹ ورک انجینئر ملازمت کی۔ والد صاحب کی تعلیم کم تھی وہ اپنے ایک دوست عالمگیر کا ذکر بہت فخر سے کرتے تھے کہ عالمگیر ماشاءاللہ ایک الیکٹریکل انجینئر ہے، تو میں نے سوچا کہ ابھی دوست الیکٹر یکل انجیئر ہے جب بیٹا ہو گا تو باپ کی خوشی اور فخر کا کیا عالم ہو گا لہذا آئی ٹی فیلڈ چھوڑ دی اور انجینئرننگ کی جانب آ گیا۔

سوال : ملا ئیشیا کا نظام تعلیم کیسا ہے اور پاکستانی طلباءکو ملائیشیا میں تعلیم حاصل کرنے کے دوران کن کن مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے؟

جواب: ملائیشا کا تعلیمی نظام پہلے بہت زیادہ اچھا تھا ،اس کے زیادہ اچھا ہونے کی وجہ مضبوط اور سستاہونا تھا،لیکن اب تعلیمی نظام تو مضبوط ہے لیکن مہنگائی کا طوفان بھی بڑھ چکا ہے پرائیویٹ یونیورسٹیاں پیسے کمانے کے لالچ میں فیس بڑھاتی ہی جا رہیں ہیں۔مالی مسائل کے علاوہ طلباءکو سب سے زیادہ مسئلہ یہاں کی امیگریشن سے ہوتا ہے۔ ذرا سا ایک سمیسٹر آپ کا رزلٹ ڈاؤن ہوا تو ویزہ لگانے میں بہت نخرے کیے جاتے ہیں حتی کہ ایک سیمسٹر کے برے رزلٹ کی وجہ سے ملک سے بے دخل کرنے کی دھمکیاں بھی دی جاتیں ہیں۔ جہاں اس سختی کی وجہ سے کچھ لڑکے پڑھائی میں سیریس ہوئے وہیں کئی کو مشکلات کا سامنا بھی کرنا پڑا۔

سوال : آپ سب سے پہلے کس اردو فورم سے متعارف ہوئے اور پاکستانی پوائنٹ کے ساتھ کیسے منسلک ہوئے؟

جواب: میں سب سے پہلے2008 میں فرینڈز کارنر پر گیا لیکن وہاں صرف اسلام سکیشن میں ہی پوسٹنگ کرتا تھا یا صرف اسلام سیکشن میں ہی دوسروں کے تھریڈز پڑھتا تھا۔ فرینڈز کارنر پر ہی ایک لڑکے نے جو کہ پاکستانی پوائنٹ کے اصل ایڈمن ہیں نے مجھے پاکستانی پوائنٹ کا تعارف کرایا اور مجھے اپنے پاس بلایا،بس پھرمیں پاکستانی پوائنٹ پر ایسا آیا کہ کہیں نہ گیا۔

سوال : آپ نے پا کستانی پوائنٹ کی بحیثیت ایڈمن ذمہ داری کب سنبھالی، اور فورم کو اس مقام تک لانے میں کیا کیا جدوجہد کرنا پڑی ؟

جواب: پاکستانی پوائنٹ کا ایڈمن مجھے اس کے قیام کے تیسرے ماہ ہی بنا دیا گیا تھا اور فورم کو اس مقام تک لانے میں میری محنت اور جدوجہد بہت کم ہے اراکین کی محبت ،محنت، لگن اور خلوص بہت زیادہ ہے فورم ہمیشہ اراکین سے بنتے ہیں بہت سے نام ایسے ہیں جن لوگوں نے ہر اچھے برے وقت میں ہمارا ساتھ دیا۔ ان سب کے لیے دل سے ہمیشہ دعائیں نکلتی ہیں۔

سوال : ایڈمن بننے کے بعد آ پ کے شب وروز میں کیا تبدیلی آئی ، فو رم کو روزانہ کتنا وقت دینا پڑتا ہے اور ما ہا نہ اپنی جیب سے کتنے اخراجات بر داشت کر نا پڑتے ہیں ؟

جواب: ایڈمن بننے کے بعد ہر قسم کی سوشل لائف چھوڑ دی کرکٹ، جم، رگبی سب کچھ چھوڑ دیا، اب بس پہلی ترجیح پڑھائی ہوتی ہے اور دوسری پاکستانی پوائنٹ جیسے ہی فارغ وقت ملے، پاکستانی پوائنٹ پر آجاتا ہوں اور پاکستانی پوائنٹ کا ماہانہ خرچہ چالیس ہزار روپے کے قریب ہے ہم نے کتابیں سکین کرنے کے لیے کچھ لڑکوں کو جاب دے رکھی ہے ان کی تنخواہیں میں اور سائیٹ ایڈمن شاہ زیب صاحب اپنی پاکٹ منی سے دیتے ہیں۔

سوال : بہت سے ایڈمن اپنے فو رم سے پیسے بھی کما تے ہیں ۔ آپ نے اپنے فورم سے پیسے نہ کمانے کا اعلان کیا ہوا ہے، اس کی کیا وجہ ہے ؟DSC00180

جواب: ہم نے ہمیشہ سے ہی چاہا تھا کہ ہمارا فورم کسی نا کسی اچھی وجہ سے دوسرے فورمز سے مختلف رہے دوسرے فورمز بھی اچھے ہیں ماشاءاللہ لیکن ہم چاہتے تھے کہ کوئی تو ایسی چیزہو جو کسی اور میں نا ہو، لہذا اسی وجہ سے ہم نے کہا کہ ہم اپنے فورم سے کچھ نہیں کمائیں گے۔ ویسے بھی فورم ہمارا گھر ہے اور یہاں کے لوگ ہمارے فیملی ممبراب اپنے گھر کو کمرشل بنانا ہمیں اچھا نہیں لگتا، کسی کی جیب سے نکلنے والے پیسوں سے زیادہ اہم ان کے دل سے نکلنے والی دعا ہے۔

سوال : ایک ایڈمن اپنے فورم سے کس کس طریقے سے پیسے کما تا ہے اور پھر اس فور م سے حا صل ہو نے والی آمدن کس کس کے حصے میں آتی ہے ؟

جواب: جہاں تک میرا اندازہ ہے کہ ایڈمن اپنے فورم سے دو طرح سے پیسے کما سکتا ہے۔ ایک تو اپنے فورم پر مختلف قسم کے کمرشل لگا کر اور دوسرے اپنے فورم کی ممبر شپ بیچ کر اور پیسے اسی کے ہاتھ ہی آتے ہوں گے جو اس فورم کی ہوسٹنگ کمپنی اور دوسرے اخراجات برداشت کرتا ہو گا۔

سوال : فورم کی پر ومو شن کےلئے کیا کیا کرنا پڑتا ہے، اور آئی ٹی کے اردو فورم کی مقبولیت کا انحصا ر کس قسم کے مواد پر ہوتا ہے ؟

جواب: فورم کی پرموشن کے لیے اچھا اور منفرد کام کرنا پڑتا ہے۔ ایسا اچھا مواد فورم پر رکھنا پڑتا ہے جو کسی دوسرے فورم پر نہ ہومثلا نایاب قسم کے سافٹ ویئر، بہترین ناولز اور اچھی کتب وغیرہ پھر لوگ خود ہی ایک دوسرے کو ریفر کرتے ہیں کہ فلاں فورم بہت اچھا ہے، وہاں ضرور جانا اور آئی ٹی فورم کی مقبولیت کا انحصار وہاں کے مکمل اردو کورسسز پر ہوتا ہے کیو نکہ سافٹ ویئرز تو ہر کوئی کہیں نہ کہیں سے ڈھونڈ ہی لے گا لیکن کمپیوٹر کورسزاور وہ بھی اردو میں بہت کم ملیں گے۔

سوال : پا کستانی پو ائنٹ کتنے سال کا ہو گیا ہے اور، اس عرصہ میں آپ نے اپنے فورم ممبرز کو کیا کیا سہو لتیں فراہم کیں، اور آپ کا فورم دوسرے اردو فورمز سے کس طرح بہتر ہے ؟

جواب: پاکستانی پوائنٹ اس سال تین سال کا ہوا ہے اور یہ واحد فورم ہے جو آئی ٹی اور اردو ادب کو ساتھ ساتھ لے کر چل رہا ہے الحمد للہ، دوسرے فورمز پر یا تو صرف آئی ٹی پر کام ہوتا ہے یا پھر اردو کتب پرلیکن یہاں پر الحمد للہ، آئی ٹی کے چاہنے والے ہوں یا اردو کتب کے شیدائی الحمد للہ ، کسی کو مایوسی نہیں ہوتی۔ ہم لوگوں نے بائیس کمپیوٹر کورسسز اردو میں مہیا کئے ہیں، الحمد للہ، جس میں جاوا،ایڈوب فوٹو شاپ، سی سی این اے اور مائیکرو سافٹ ورڈ، ایکسل جیسے مشہور کورسز بھی شامل ہیں۔
شاعری ڈیزائننگ سیکھنے والوں کے لیے چھ یا سات بہترین ڈیزائنرز نے ویڈیو کلاسسز بنا کر شاعری ڈیزائن کرنا سکھائی اورالحمد للہ سب سے بڑی کامیابی ستمبر2011سے اب فروری 2012تک ہم لوگ2000کے قریب کتب جن میں علمی، ادبی، تفریحی کتابیں شامل کیں، سکین کر کے اپ لوڈ کر چکے ہیں۔ الحمد للہ، ہر ماہ جو بھی نیا ڈائجسٹ مارکیٹ میں آتا ہے اسی دن یا اس سے اگلے دن ہم سکین کر کے اپ لوڈ کر دیتے ہیں۔ الحمد للہ، اس کےعلاوہ اردو ناولز اورعمران سیریز کی بہت سی کتب بھی مہیا کیں ہیں۔ سب سےبڑی بات یہ کہ یہ سب کچھ بالکل مفت ہے۔ کسی سے بھی، کسی قسم کا کوئی معاوضہ نہیں لیا جاتا اور پاکستانی پوائنٹ ایک مکمل فیملی فورم ہے جہاں گانے، فلموں، ڈراموں کا ذکر تک کرنا منع ہے۔ یہ چیزیں دوسرے فورمز پر بہت کم ہوتی ہیں۔

سوال : ایک فورم کوچلا نے کےلئے کتنے افراد کی ٹیم مل کر کا م کرتی ہے اور کیا کچھ ٹیم ممبرز کو معا وضہ بھی ادا کرنا پڑتا ہے ؟

جواب: فورم کو چلانے والی ٹیم کی تعداد کا انحصار اس فورم کے سیکشن اور اراکین کی تعداد پر منحصر ہے۔ ہماری آٹھ لوگوں کی ٹیم ہے ۔جس میں ایک سائیٹ ایڈمن، ایک مینجمنٹ، تین سپر موڈریٹر اور تین موڈریٹر شامل ہیں۔ اور دوسرے فورم پر شاید ٹیم معاوضہ طلب کرتی ہو لیکن ہم سےالحمد للہ کبھی کسی ٹیم ممبر نے ایسا مطالبہ نہیں کیا۔

سوال : آپ کے خیا ل میں پا کستان میں انٹر نیٹ استعما ل کرنے والے کتنے فیصد لو گ اردو فورمز سے فائدہ حاصل کرتے ہیں۔ کیا وجہ ہے کہ بیرون ملک مقیم پا کستانی فو رمز پر زیا دہ ایکٹو نظر آتے ہیں ؟

جواب: نہایت افسوس ناک امریہ ہے پاکستان میں رہنے والے زیادہ تر نوجوان صرف اور صرف فیس بک کے ہو کررہ گئے ہیں ، اس کا مجھے تو کبھی کوئی فائدہ نظر نہیں آیا۔ میری نظرمیں فیس بک ایک ایسی چیز ہے جو آپ کا نقصان تو کر سکتی ہے لیکن فائدہ نہیں۔ اس لیے الحمد للہ، نا صرف میں بلکہ میرے فورم کی اکثریت فیس بک استعمال نہیں کرتی حالانکہ انہی نوجوانوں کو، جو کہ فیس بک کے ہو کررہ گئے ہیں۔ ان کو اردو فورمز پر آنا چاہیے، آئی ٹی کے جو جو کورسسز ان کے شہروں میں کثیر معاوضہ پر کروائے جاتے ہیں وہ ارد وفورمز پر مفت ملتے ہیں انھیں اس سے مستفید ہونا چاہیے۔اور رہی بات بیرون ملک پاکستانیوں کی بڑی تعداد کے اردو فورمز پر آنے کی تو بیرون ممالک میں اردو کتب کی یاتو رسائی نہیں ہے اور اگر وہاں سے ملتیں ہیں تو اتنی زیادہ مہنگی ہوتیں ہیں کہ خریدنے سے پہلے کئی بار سوچنا پڑتا ہے۔ اور یہی حال کمپیوٹر کورسسزکا ہے لہذا اردو زبان میں کمپیوٹر کی معلومات اور اردوکتب کی چاہت بیرون ملک پاکستانیوں کو اردو فورمز کی جانب راغب کرتی ہے۔

سوال : کسی بھی فورم پر ممبران کوکارکردگی کی بنیا د پر جو عہدے یا رینک دئے جا تے ہیں، اس سے انہیں کیا فا ئدہ ہو تا ہے؟ اور فورم پر وہ کیا خا ص معلومات ہو تی ہیں جن تک عا م ممبرزکی رسائی نہیں ہو تی ؟

جواب: کسی کو رینک دینے یا نہ دینے کے اصول و ضوابط ہر فورم کے الگ الگ ہیں کچھ فورمز معاوضہ لے کر رینک دیتے ہیں۔جبکہ کچھ فورمز جیسا کہ ہمارا فورم ہے ہم صرف کسی رکن کی تخلیقی صلاحیتوں اور اس کی محنت کی بنیا د پر اس کے رینک کا تعین کرتے ہیں، مثلا کسی رکن نے آئی ٹی سیکشن میں بہت کام کیا ہے اور مسلسل کر رہا ہے، تو اسے آئی ٹی سیکشن کا نگران مقرر کر دیا جاتا ہے کہ اب یہ سیکشن آپ کے ذمے اسے کچھ اختیارات بھی دے دیے جاتے ہیں، جو کہ صرف اسی سیکشن کی حد تک ہوتے ہیں تا کہ وہ ہر قسم کی غلط حرکات کو روک سکے، غلط مواد کی پوسٹنگ ڈیلیٹ کر سکے وغیرہ، جبکہ عام اراکین کو کچھ سیکشن تک رسائی حاصل نہیں کر سکتے۔مثلا ایک سیکشن ہے جو صرف موڈریرٹرز کو نظر آتا ہے وہاں ہم فورمز کے متعلق ڈسکشن کرتے ہیں، کہ فلاں سیکشن کا کیا ہونا چاہیے فلاں رکن کو کیا رینک دینا چاہیے وغیرہ یہ سیکشن عام اراکین کو نظر نہیں آتا۔ اس سے اوپر ایک اور سیکشن ہوتاہے، وہ ہے سپر موڈریٹر زون جو صرف سائٹ ایڈمن ، مینجمنٹ اور سپر موڈرریٹرز کو نظر آتا ہےعام اراکین اور موڈریٹرز کو یہ نظر نہیں آتا۔ وہاں ان باتوں کی ڈسکشن کی جاتی ہے، جو ہم عام اراکین اور موڈریٹرز سے پوشیدہ رکھنا چاہتے ہوں پھران سب سے اوپر ایک اور سیکشن بھی ہوتا ہے، ایڈمن زون جو صرف ایڈمنز دیکھ سکتے ہیں۔ وہ کسی عام رکن یا ایڈمنز کےعلاوہ کسی ٹیم کے رکن کو بھی نظر نہیں آتا۔ وہاں فورم کے متعلق حساس قسم کی ڈسکشن اور فیصلے کیے جاتے ہیں۔

سوال : پا کستانی پوا ئنٹ پر 26 ما رچ 2011 کو ایک وضا حتی پو سٹ کی گئی کہ ”کل فورم پر جو ہوا اس کےلئے ہم معذرت خواہ ہیں “۔ یہ کیا واقعہ ہوا تھا اور ایسا کیو ں ہوتا ہے ؟ کیا اردو فورمز کے درمیا ن بھی کوئی کشمکش پائی جاتی ہے ؟

جواب: فورم پر بہت سے واقعات ہوتے رہتے ہیں۔ جس کی طرف آپ کا اشارہ ہے وہ مجھے یاد تو نہیں لیکن اندازہ ہے کہ کسی بہت ہی قابل اعتماد رکن نے دوسرے اراکین کو تنگ کیا تھا اور اپنا کوئی فورم بنایا تھا اور ہمارے اراکین کو مجبور کر رہا تھا کہ میرے فورم کو جائن کرو، سب کو پرسنل میسج کر رہا تھا ،اور میں اس وقت آن لائن نہیں تھا، جیسے ہی میں آیا تو میں نے اس رکن کو بین کر دیا اور سب سے معذرت کر لی ایسا اس لیے ہوتا ہے کہ جب کوئی نیا فورم بناتا ہے تو وہ بجائے اس کے کہ اسے مشہور کرنے کے لیے اپنے فورم کو اچھا بنائے وہ دوسرے فورمز پر جا جا کے اپنے فورم کا لنک لوگوں کو مسیج کرتا ہے جو کہ ایک غلط طریقہ کار ہے۔ اردو فورمز کے درمیان کشمکش ہوتی ہے، پہلے ہماری بھی بہت سے فورمز کے ساتھ تھی، لیکن اب ایسی سوچ اور یہ حاسدانہ پن ختم کر لیا ہے الحمد للہ۔

سوال : اگر کو ئی اپنا فورم بنا نا چا ہے تو اسے کیا مفید مشورہ دیں گے، کیا نیا فورم بنا نے کا خواہش مند، رہنما ئی کے لئے آپ سے را بطہ کر سکتاہے ؟

جواب: اپنا ذاتی فورم بنانے کے لیے اخراجات بہت زیادہ ہوتے ہیں۔ وی بلیٹن کا لائسنس لینا اور ہوسٹنگ کمپنی کے اخرابات وغیرہ اگر کوئی اپنا فورم بنانا چاہتا ہے تو ضرو بنائے، میرا یہی پیغا م ہے کہ فورم کا کوئی ایسا مقصد ہو جو حرام نہ ہو اور غلط نہ ہو ،مثلا فلموں، گانوں یا دوسرے غیر اخلاقی مواد کی تقسیم اور تشہیر والا فورم بنانے سے گریز کیا جائے۔ ہم پہلے ہی اخلاقی اور معاشرتی طور پر تباہ ہو چکے ہیں اس وقت ضرورت ایسے فورمز کی ہے جو لوگوں میں مثبت سوچ پیدا کریں اور ان کی تخلیقی صلاحیتوں میں اضافہ کریں،اور فورم بنانے کے لیے جسے جو مدد چاہیے انشاءاللہ ہم حاضر ہیں۔

سوال : انٹرنیٹ استعما ل کرنے والے پا کستانی نوجوانوں کے نا م اپنے پیغا م میں کیا کہنا پسند فر مائیں گے ؟

جواب: میرا انٹرنیٹ استعمال کرنے والے نوجوانوں کویہی مشورہ ہے کہ فیس بک یا اس قسم کی دوسری ٹائم پاس ویب سائیٹس پر، جہاں سوائے گپ شپ کے کچھ نہیں ہوتا ،وقت کم گزارا کریں ،یہی وقت اپنی پڑھائی کو دے دیا کریں ۔ اب ہر وقت پڑھا بھی تو نہیں جا سکتا لیکن اگر انٹرٹینمنٹ کرنی ہی ہے تو ایسی ویب سائیٹس یا ایسے فورمز کا رخ کیا جائے جہاں اچھے اچھے لوگ ہوں صاف ستھرا ماحول ہو اور جہاں سے آپ کو کچھ سیکھنے کو ملے۔



Journalist, Android Application Developer and Web Designer. Writes article about IT in Roznama Dunya. I Interview Prominent Personalities & Icons around the globe.


2 thoughts on “اردو ادب اورانفارمیشن ٹیکنالوجی کا ایک ایسا اردو فو رم جہا ں پر بہت کچھ سیکھنے کے علاوہ آپ کو ملے گھر جیسا ماحول، ایڈمن ”پاکستانی پوائنٹ“ محترم وقا ر عظیم صا حب کا تفصیلی انٹرویو ۔

Leave a Reply

Translate »