انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کے مختلف طریقے

انٹرنیٹ پر مستقل مزاجی سے محنت کر کے اپنے حالات کو بدلنے کا فن سیکھئے

My this article was published in Daily Ausaf Sunday Magazine on 1st December 2013.

My this article was published in Daily Ausaf Sunday Magazine on 1st December 2013.

انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کے حوالہ سے مفید اورمستند معلومات آپ کو اردو زبان میں بہت کم پڑھنے کو ملیں گی۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ جولوگ انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کا فن جانتے ہیں انہوں نے اس صلاحیت کو حاصل کرنے پربہت زیادہ محنت اور وقت صرف کیا ہوتا ہے۔ جبکہ کسی دوسرے فرد کو ان سب طریقوں کے بارے میں بتانے پر کافی وقت صرف کرنا پڑتا ہے اور وہ اس مفت کی مشقت سے بچنے کی ہر ممکن کوشش کرتے ہیں۔ اس کے باوجود میں نے آپ کو انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کے سب سے بہترین طریقوں کے بارے میں مکمل معلومات مہیا کردی ہے۔ خاص طور پر گذشتہ شماروں میں جو معلومات پیش کی گئیں تھیں انہیں پڑھنے کے بعد ایک نا تجربہ کار شخص بھی اپنی مدد آپ کے تحت انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کا آغاز کر سکتا ہے۔

انٹر نیٹ سے پیسے کمانے کے علاوہ اگر ہم کسی بھی فیلڈ میں مہارت حاصل کرنے کا ارادہ کرلیں اور مستقل مزاجی سے اپنے وقت کا مثبت استعمال کرکے کچھ سیکھ لیں تو بہت بڑی سرمایہ کاری کے بغیر بھی صرف ہنر کی بنیاد پر محنت کرکے مالی طور پر مستحکم ہوا جا سکتا ہے، ہو سکتا ہے کہ آپ کو اپنی مدد آپ کے تحت سیکھنے میں تھوڑا زیادہ وقت لگ جائے لیکن زندگی کے کسی موڑ پر بھی آپ کو اپنے اس فیصلہ پر پچھتاوا نہیں ہوگا۔
اس وقت پاکستان میں طالب علموں کی بہت بڑی تعداد پڑھائی کے علاوہ پارٹ ٹائم جاب کے طور پر انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کا کام بھی کر رہی ہے۔ یہاں پر میں یونیورسٹی کے صرف دو طالب علموں کے انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کے تجربات تحریر کروں گا کہ انہوں نے کس طرح، بغیر کسی رہنمائی کے، اپنی مدد آپ کے تحت انٹرنیٹ کو ذریعہ روزگار بنایا اور اس وقت وہ تعلیم حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ اچھی خاصی آمدن بھی کر رہے ہیں،

Abuzar Mehdi

Abuzar Mehdi

ابوذر مہدی UMT لاہور میں MCS کے طالب علم ہیں۔ انہوں نے اپنی ویب سائٹس بھی بنائی ہوئی ہیں اور اس کے علاوہ ،وہ انٹرنیٹ پر مختلف طریقوں سے ماہانہ 600 سے 700 ڈالر تک کما رہے ہیں۔ انٹرنیٹ سے ڈالر کمانے کیلئے آغاز میں کن مشکلات سے گذرنا پڑتا ہے اس سوال کے جواب میں انہوں نے اپنے تجربات کو بیان کرتے ہوئے کہا کہ شروع میں انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کے لئے میرے ذہن میں ایک ویب سائٹ بنانے کا خیال آیا تو میں نے اس پراجیکٹ کو لانچ کرنے کا فیصلہ کر لیا لیکن مجھے یہ معلوم نہیں تھا کہ آغاز کہاں سے کروں اس کے علاوہ اور بھی بہت سے سوالات تھے جو میرے ذہن میں گردش کرتے تھے کہ میری ویب سائٹ کامیاب ہوگی یا سب محنت رائیگاں چلی جائے گی اور کیا میری ویب سائٹ پر اتنے وزٹر آ سکیں گے کہ میں کچھ کما سکوں اس کے علاوہ مجھے سب سے بڑا خوف یہ تھا کہ لوگ میری محنت کو سراہیں گے یا نہیں۔ بلاآخر بہت سوچ بچار کے بعد میں نے کام کا آغاز کر دیا۔ میرے دوستوں نے منع بھی کیا کہ ان فضول کاموں میں وقت ضائع نہ کرو لیکن میں نے کسی کی پرواہ نہیں کی اور اپنا کام جاری رکھا جب مجھے 124ڈالر کا پہلا چیک موصول ہوا تو مجھے بہت خوشی ہوئی لیکن کسی کو بھی یقین نہیں آرہا تھا کہ واقعی یہ سب ممکن ہو گیا۔
پھر میں نے انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کے لئے صرف ویب سائٹ پر انحصار نہیں کیا بلکہ دیگر ذرائع کے بارے میں بھی معلومات حاصل کیں اور اب انٹرنیٹ سے میری کل آمدن کے ذرائع یہ ہیں 35 فیصد ایمازون(Amazon) پر ایفلی ایٹ مارکیٹینگ سے جبکہ 15 فیصد دیگر ایفلی ایٹ مارکیٹنگ سے اور 40 فیصد Media.net سے، 10 فیصد ڈونیشن سے جو میری ویب سائٹ کی سپورٹ کے لئے پوری دنیا سے کوئی بھی فرد مجھے عطیہ کر سکتا ہے۔
وہ لوگ جو انٹرنیٹ سے کمانا چاہتے ہیں ان کے لئے میرا مشورہ یہ ہے کہ انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کے لئے کسی بھی طریقے کا انتخاب کرنے سے پہلے اس حوالہ سے اچھی طرح ریسرچ ضرور کریں اور پھر کام کا آغاز کر دیں۔ اور ایک بات کا خاص خیال رکھیں کہ اس کام میں ہاتھ ڈالیں جس میں آپ کی دلچسپی بھی شامل ہو۔ جب آپ اپنی دلچسپی والے کام سے آغاز کریں گے تو آپ کو اکتاہٹ نہیں ہوگی۔ یاد رکھیں کہ انٹرنیٹ پر کی ہوئی آپ کی محنت کا پھل آپ کو ضرور ملتا ہے مگر اس میں تھوڑا وقت لگتا ہے۔

Muhammad Owais

Muhammad Owais

محمد اویس حلیم UET لاہور میں زیر تعلیم ہیں۔ وہ انٹرنیٹ سے ماہانہ 30 سے 40 ہزار روپے کمارہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ یہ تین سال پہلے کی بات ہے کہ ایک دن مجھے یوٹیوب پر انٹرنیٹ سے ارننگ کے حوالہ سے ویڈیو دیکھنے کا اتفاق ہوا۔ پھر میں نے انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کے لئے کافی تجربے کیئے۔ مجھے اس راستے پر چلنے کے لئے بہت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، والدین ڈانٹتے تھے کہ بیٹا ہر وقت کمپیوٹر پر کیا کرتے رہتے ہو۔ بات دراصل یہ تھی کہ مجھے صحیح راستے کا تعین کرنے میں مشکل پیش آ رہی تھی۔ مجھے یہ سمجھ نہیں آ رہی تھی کہ میں اپنی سوچ اور نت نئے خیالات کو کیسے استعمال میں لاو¿ں۔ میں نے بغیر کسی رہنمائی کے ایسے ہی بہت سی ویب سائٹس بنا لیں اب نہ ان پر وزٹر آتے تھے اور نہ ہی مجھے کوئی آمدن ہوئی مجھے SEO کے بارے میں بھی کچھ پتا نہیں تھا لیکن میں نے کوشش جاری رکھی اور وقت گزرنے کے ساتھ اپنی غلطیوں سے بھی بہت کچھ سیکھا۔ اس سارے عرصہ کے دوران میرا بہترین دوست اور ہمسفر گوگل رہا،جس نے مجھے بہت کچھ سکھایا اور آج میں اس کی رہنمائی کی بدولت ہی انٹرنیٹ سے پیسے کما رہا ہوں۔
انٹرنیٹ سے میری پہلی ارننگ 40 ڈالر کی ہوئی تھی اور اس کے لئے مجھے بہت محنت کرنا پڑی تھی۔ اس دوران میں نے کئی مرتبہ اس کام کو چھوڑنے کا سوچا تھا مگر چھوڑا نہیں اور پھر جب گوگل نے ایڈ سنس سے ارننگ کا پہلا چیک میرے نام پوسٹ کیا تو مجھے ڈاک خانہ کے چار چکر لگانے پڑے میں بہت نروس تھا کہ پتا نہیں یہ پیسے ملیں گے بھی کہ نہیں۔ بہرحال مجھے وہ چیک مل ہی گیا ، اپنی محنت سے کی ہوئی یہ کمائی حاصل کرکے مجھے بہت خوشی ہوئی۔
اس وقت میں انٹرنیٹ سے ایفلی ایٹ مارکیٹنگ، کمیشن جنکشن، گوگل ایڈسنس اور CPA سائٹس سے اچھی ارننگ کر رہا ہوں۔ CPA سائٹس انٹرنیٹ سے پیسے کمانے کا ایک معقول اور بہترین طریقہ تھا۔ مگر اب بہت سی CPA سائٹس نے پاکستانیوں کے لئے سہولت ختم کر دی ہے، اب بہت تھوڑی سائٹس ہی ہمیں اپروو(Approve) کرتی ہیں۔اس وقت میں سب سے زیادہ آن لائن ارننگ اپنی ویب سائٹس پر ایڈسنس کے ذریعے کر رہا ہوں۔
انٹرنیٹ سے ڈالر کمانے کے خواہش مند افرد کے فائدے کے لئے انہوں نے اپنے تجربہ کی بنیاد پر بتایا کہ عام طور پر لوگ تین غلطیاں کرتے ہیں۔ سب سے بڑی غلطی اس کام کو آسان سمجھنا ہے اور دوسری یہ کہ وہ اپنی صحیح سمت کا تعین نہیں کر پاتے۔ وہ یہی سوچتے ہیں کہ وہ جو کام کر رہے ہیں وہی صحیح ہے، حالانکہ اس میں تھوڑی سی تبدیلی آپ کی تقدیر بدل سکتی ہے۔ تیسری بڑی غلطی اس شعبہ میں صرف پیسے کی وجہ سے آنا ہے اور ایک ہی وقت میں ہر وہ کام کرنے کی کوشش کرنا کہ جس سے پیسے کمائے جا سکیں۔ وہ لوگ جو مستقل مزاجی سے محنت کرنے کے عادی نہیں ہوتے اور جلد پیسے بھی کمانا چاہتے ہیں، وہ اتنی ہی جلدی اس شعبہ کو چھوڑ دیتے ہیں۔ جبکہ اگر آپ اس کام کو اپنا شوق اور جنون بنا لیں، اپنی صلاحیتوں پر بھروسہ کریں،آپ خود کو عام شخص سمجھنا چھوڑ دیں،تو کامیابی آپ کے قدم چومے گی۔



Journalist, Android Application Developer and Web Designer. Writes article about IT in Roznama Dunya. I Interview Prominent Personalities & Icons around the globe.


Leave a Reply

Translate »